IQNA

7:10 - November 26, 2018
خبر کا کوڈ: 3505398
بین الاقوامی گروپ- لبنان میں قایم فلسطینی دارالافتای کے سیکریٹری جنرل کے مطابق تہران میں منعقدہ وحدت کانفرنس اور اس میں شیعہ سنی علما کی وحدت سے اسلام کا درست چہرہ دیکھنے کو ملا۔

ایکنا- ۱۲ ربیع‌الأول کو اہل سنت ولادت رسول اکرم‌(ص) مناتے ہیں اور ۱۷ ربیع الأول کو شیعہ کا کہنا ہے کہ ولادت کا دن ہے، حضرت امام خمینی (ره) نے اس پورے ہفتے کو ہفتہ وحدت منانے کا اعلان کیا اور تین عشرے پہلے تقریب اسلامی الاینس کا قیام عمل میں لایا گیا۔

 

اسی حوالے سے ہرسال وحدت اسلامی کانفرنس منعقد کی جاتی ہے تاکہ اسلامی دنیا میں عملی طور پر وحدت اسلام کا قیام عمل میں لایا جاسکے۔

 

اس کانفرنس میں اسلامی دنیا کی اہم ترین علمی اور مذہبی شخصیات کو دعوت دی جاتی ہے اور اب تک عالم اسلام کی سنیکڑوں جید علما اور دانشور ان نشستوں میں شرکت کرچکے ہیں۔

 

لبنان میں قایم فلسطینی دارالافتای مرکز کے سیکریٹری جنرل شیخ محمد سلیم اللبیادی جو تہران میں «قدس، محور وحدت امت» کانفرنس میں شریک ہے ایکنا نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے انکا کہنا تھا: مختلف مسالک کے علما کی شرکت نے دنیا کے سامنے اسلام کا حقیقی چہرہ پیش کیا ۔

 

شیخ محمد سلیم اللبابیدی نے ایک سوال کہ کیوں ان کانفرنسوں میں شرکت کے باوجود عملی وحدت کا قیام مشکل بن جاتا ہے کے جواب میں کہا  ان کانفرنسوں کے اعلامیہ یا قرار دادوں پر عملی اقدام معاشرے کے تمام طبقوں کی بھرپور حمایت کے بغیر دشوار ہے۔

 

انکا کہنا تھا:  بعض ممالک میں ان قرار دادوں پر اجرا آسان ہے مگر بعض ایسے ممالک ہیں جو اس وحدت کی راہ میں حایل ہیں۔

 

شیخ محمد سلیم اللبابیدی کے مطابق بہت سے ادارے اور مراکز ان امور پر ایمان رکھتے ہیں مگر عملی اقدام کے لیے حکومتوں کی حمایت ضروری ہے۔

 

 فلسطینی دارالافتای کے مطابق جب اسلام میں اتحاد تھا تو یہ دنیا پر حکمرانی کررہا تھا مگر اختلافات نے مسلم دنیا کو پستیوں میں ڈال دیا ہے اور ایک سازش کے تحت بعض شدت پسند بھی اس بدنامی کی سازش میں شریک کار ہیں۔

 

انکا مزید کہنا تھا کہ بہت سی اہم شخصیات ذاتی مفادات کے لیے وحدت کے اقدامات پر عمل کرنے سے گریر کرتے ہیں اور انکے لیے اسلامی وحدت شاید نقصان دہ ہے۔

 

دارالافتای فلسطین نے روھنگیا اور فلسطین میں عملی حمایت کو ان باتوں پر دلیل قرار دیا اور کہا کہ مختلف مسایل کی وجہ سے ان مظلوموں کی عالمی سطح پر حمایت نہیں کی جاتی۔/

3766915

نام:
ایمیل:
* رایے: