IQNA

7:07 - February 10, 2019
خبر کا کوڈ: 3505723
بین الاقوامی گروپ: رحمت للعالمین کے شہر مدینۃ النبی میں 6سالہ شیعہ زائر رسول خداﷺ ’’زکریا‘‘ کو یزید کے پیروکار وہابی داعشی سوچ رکھنے والے ٹیکسی ڈرائیور نے اس کی ماں کے سامنے ذبح کرکے شہید کردیا۔

ایکنانیوز- شفقنا کے مطابق سعودی عرب میں یزید کے پیروکار وہابی ڈرائیور نے کمسن شیعہ زائر رسول ﷺ کو بغض علی(ع) میں ماں کے سامنے ذبح کرکے ننھے علی اصغرؑ کی شہادت کی یاد تازی کردی۔

تفصیلات کے مطابق رحمت للعالمین کے شہر مدینۃ النبی میں 6سالہ شیعہ زائر رسول خداﷺ ’’زکریا‘‘ کو یزید کے پیروکار وہابی داعشی سوچ رکھنے والے ٹیکسی ڈرائیور نے اس کی ماں کے سامنے ذبح کرکے شہید کردیا۔ مدینہ منورہ میں ذبح ہونے والے بچے زکریا کی خالہ نے بتایا کہ بدھ کے دن ظہر کے وقت اس کی بہن جد ہ سے مسجد نبوی کی زیارت کیلئےآئی اور اپنے گھر تک پہنچنے کیلئےسلطان بن عبدالعزیز روڈپر بس اسٹینڈ سے ایک ٹیکسی پر سوار ہوئی ،راستے میں بچے کوپیاس لگی اور اس نے ماں سے پانی طلب کیاتو اسکی ماں نے ایک جنرل اسٹور کے سامنے رکنے کو کہا تاکہ پانی خرید سکےاور بچے کو لیکر دکان پر پانی خریدنے گئی ، گاڑی میں دوبارہ سوار ہوتے وقت ماں نےالحمد لله اور اللہم صلی علی محمد وآلہ کہا تو ڈرائیور نے پوچھا تم شیعہ ہو؟، اس نےہاں میں جواب دیا،ڈرائیور آگ بگولا ہوا اور ایک شیشہ توڑ کر اور بعض کے بقول چھری لیکر بچے کی جانب بڑھااور بچے کو پکڑ کر زمین پر لٹایا اور اللہ اکبر کہ کر ذبح کر دیا،ماں شور مچاتی رہی اور بچا ؤ کیلیے آوازیں لگاتی رہی لیکن اسکی کسی بھی راہگیریا دکاندار نے کوئی مدد نہ کی،ششدر اور بے بس ماں جب بچے کو گود میں لیکردوڑی تو وہ درندہ اس کے پیچھے آکر پوچھ رھا تھا کہ بچہ مرا ہے یا نہیں، بچے کا تعلق سعودیہ کے شہر احساء کے قریب الشعبہ نامی علاقے سے ہے اور اسکی والدہ جدہ میں ملازمت کرتی تھی۔

واضح رہے کہ شام اور عراق سمیت دنیا بھر میں تکفیری وہابی سوچ پھیلانے کا ذمہ دار سعودی عرب ہے، اس بات کو موجودہ سعودی ولیعہد قصاب محمد بن سلمان نے علی الاعلان قبول کیا ہے۔ اس تکفیری سوچ کے سبب دنیا بھر میں لاکھوں افراد بے گناہ شہید کیے جاچکے ہیں۔

نام:
ایمیل:
* رایے: