IQNA

13:59 - January 22, 2022
خبر کا کوڈ: 3511160
تہران کا تعمیری نقطہ نظر، یمن میں موجودہ ممالک کے درمیان اختلافات کو حل کرنے اور اس عرب ملک میں انسانی تباہی کے خاتمے پر مبنی ہے۔
سوشل میڈیا نیوز کے مطابق پاکستان میں قائم اسلامی جمہوریہ ایران کے سفارتخانے نے یمن اور متحدہ عرب امارات کی تبدیلوں سے متعلق  ایک پاکستانی اخبار کے ایک مضمون میں ایران کیخلاف خلاف بے بنیاد الزامات پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا ہے کہ تہران کا تعمیری نقطہ نظر، یمن میں موجودہ ممالک کے درمیان اختلافات کو حل کرنے اور اس عرب ملک میں انسانی تباہی کے خاتمے پر مبنی ہے۔
 
رپورٹ کے مطابق، اسلام آباد میں ایرانی سفارتخانے کے پبلک ڈپلومیسی اینڈ میڈیا ڈیپارٹمنٹ نے آج بروز جمعہ کو جاری ایک بیان میں بدھ کے روز انگریزی زبان کے اخبار "ڈاؤن" میں "متحدہ عرب امارات کو نشانہ بنایا" کے عنوان سے ایک مضمون میں ایران کے خلاف منفی اور بے بنیاد الزامات پر ردعمل کا اظہار کیا۔
 
بیان میں کہا گیا ہے کہ پاکستان میں اسلامی جمہوریہ ایران کا سفارت خانہ، اس اخبار کے لیے اپنے احترام کی تجدید کرتے ہوئے، اس کی سختی سے تردید کرتا ہے اور نوٹ کرتا ہے کہ اس طرح کے دعوے کرنے سے دونوں ممالک کے تعلقات کے بارے میں رائے عامہ پر منفی اثرات مرتب ہوں گے اور تعلقات کی مثبت جہتیں اور خطے میں دیرپا امن اور استحکام کے لیے دونوں حکومتوں کے درمیان تعاون کو نقصان پہنچاتی ہے۔
 
بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ  اس طرح کی خبریں، حقیقت کو مسخ کرتے ہوئے اسلامی جمہوریہ ایران کی حکومت کا اپنے پڑوسیوں بشمول متحدہ عرب امارات کی حکومت کی خودمختاری اور علاقائی سالمیت کا احترام، اور سیز فائر پر ایران کا تعمیری نقطہ نظر جو یمن میں موجودہ ممالک کے درمیان اختلاف کے حل اور یمن میں انسانی تباہی کے خاتمے پر مبنی ہے کو نظر انداز کرتا ہے؛ ایرانی حکومت نے خطے میں امن و سلامتی برقرار رکھنے کے لیے بھرپور کوششیں کی ہیں۔
 
ہمارے ملک کے سفارت خانے نے کہا کہ اس مضمون میں بغیر کسی وجہ اور دستاویز کے ایران پر الزام لگایا گیا ہے کہ وہ متحدہ عرب امارات میں حملہ آوروں کی حمایت کر رہا ہے۔ علاوہ ازیں اقوام متحدہ کی جانب سے اس بات کی تصدیق کے باوجود کہ آرامکو کے تیل کے سازوسامان پر حملے میں ایران ملوث نہیں تھا، یہ واضح نہیں ہے کہ اخبار نے یہ الزام کس بنیاد اور ثبوت کی بنیاد پر لگایا ہے۔
 
بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ  شائع شدہ مضمون اور آرامکو کے تیل کے سازوسامان پر حملہ آوروں کے حملوں میں ایران کے ممکنہ کردار کے بے بنیاد الزام سے متعلق اس الزام کی واضح تردید کرتے ہوئے، اس واقعے سے متعلق میں پاکستانی اخبار ڈاؤن کے ایڈیٹر سے اقوام متحدہ کی رپورٹ پر  توجہ دینے کے خواہاں ہیں جس میں بیان میں کہا گیا ہے کہ اس بات کا کوئی ثبوت نہیں ملا کہ اسلامی جمہوریہ ایران اس واقعے میں ملوث تھا اور وہ اس طرح کے دعوے کی تردید کرتا ہے۔
 
اسلام آباد میں ایرانی سفارت خانے نے اس بات پر زور دیا  کہ ظاہر ہے کہ منفی مواد اور جھوٹ کی اشاعت اچھی ہمسائیگی اور دو دوست اور برادر ممالک، ایران اور پاکستان کے درمیان جامع تعلقات کے بڑھتے ہوئے رجحان کے مطابق نہیں ہے۔ لہذا اس اخبار سے توقع کی جاتی ہے کہ وہ ان کی درستگی پر کافی تحقیق کیے بغیر مضامین شائع کرنے سے گریز کرے۔
 
ایرانی سفارتخانے کے پبلک ڈپلومیسی اور میڈیا ڈیپارٹمنٹ نے پاکستانی اخبار ڈان سے پریس قانون کے مطابق مذکورہ جواب شائع کرنے کا مطالبہ کیا۔
نام:
ایمیل:
* رایے:
* captcha: