IQNA

نوپور شرما کی مشکلات میں اضافہ، کولکاتا پولیس نے لُک آؤٹ نوٹس جاری کیا

12:01 - July 03, 2022
خبر کا کوڈ: 3512206
تہران ایکنا: سپریم کورٹ کے ذریعہ پھٹکار کے بعد دہلی پولیس نے بھی نوپور شرما کو پیغمبر محمدؐ کے خلاف قابل اعتراض بیان دینے سے متعلق نوٹس بھیجنے کا من بنا لیا ہے۔

قومی آواز نیوز کے مطابق توہین رسالتؐ کی مرتکب نوپور شرما کے لیے مشکلات میں دن بہ دن اضافہ ہوتا جا رہا ہے۔ ایک طرف سپریم کورٹ نے گزشتہ روز نوپور شرما کو ملک کے بگڑتے ہوئے حالات کے لیے ذمہ دار ٹھہرا کر اپنے بیان پر معافی مانگنے کی تلقین کر ڈالی، اور اب کولکاتا پولیس نے نوپور کے خلاف لُک آؤٹ نوٹس جاری کر دیا ہے۔ کولکاتا میں نوپر شرما کے خلاف دو ایف آئی آر درج کی گئی ہیں جس کے بعد پولیس نے یہ کارروائی کی ہے۔

قابل ذکر ہے کہ سپریم کورٹ کے ذریعہ پھٹکار کے بعد دہلی پولیس نے بھی نوپور شرما کو پیغمبر محمدؐ کے خلاف قابل اعتراض بیان دینے سے متعلق نوٹس بھیجنے کا من بنا لیا ہے۔ پہلے بھی دہلی پولیس نوپور کو دفعہ 41 اے کے تحت جانچ میں شامل ہونے کے لیے نوٹس بھیج چکی ہے۔ 18 جون کو پولیس کے سامنے پیش ہو کر انھوں نے بیان بھی درج کرایا تھا۔ دہلی پولیس اسپیشل سیل کی آئی ایف ایس او یونٹ نے بیان درج کیا تھا۔

توہین رسالتؐ معاملے میں نوپور شرما کو نارکیلڈانگا پولیس اسٹیشن نے 20 جون کو پیش ہونے کے لیے کہا تھا۔ علاوہ ازیں 25 جون کو ایمہرسٹ اسٹریٹ پولیس تھانہ نے انھیں سمن جاری کر طلب کیا تھا لیکن دونوں ہی معاملوں میں انھوں نے حاضری سے منع کر دیا تھا۔ ان کے خلاف کولکاتا کے 10 پولیس تھانوں میں شکایت درج ہے۔ نوپور شرما نے سپریم کورٹ میں عرضی داخل کر سبھی عرضیوں کو دہلی منتقل کرنے کی گزارش کی تھی، لیکن عدالت نے جمعہ کے روز ان کی یہ عرضی مسترد کرتے ہوئے کہا کہ وہ ہائی کورٹ کا رخ کریں۔ اب جبکہ کولکاتا پولیس نے لُک آؤٹ نوٹس جاری کر دیا ہے، تو نوپور شرما کے سر پر گرفتاری کی تلوار لٹک رہی ہے۔

 

source: qaumiawaz

نام:
ایمیل:
* رایے:
* :