IQNA

لاقانونیت کی انتہا؛

لاہور، نعرہ حیدری لگانے پر سوسائٹی کے گارڈز نے نوجوان قتل کر دیا

8:39 - July 06, 2022
خبر کا کوڈ: 3512245
شہید توقیر حسین کے والد رستم علی نے اندراج مقدمہ کیلئے تھانہ سندر لاہور میں درخواست دیدی، جس پر پولیس نے سوسائٹی کے گارڈ اور ایڈمن افسر کو حراست میں لے لیا ہے۔

ایکنا انٹرنیشنل ڈیسک کے مطابق لاہور میں ملتان روڈ پر واقع پرائیویٹ ہاوسنگ سوسائٹی تھیم پارک کے سکیورٹی گارڈ نے نعرہ حیدری لگانے پر 22 سالہ نوجوان توقیر حسین کو تشدد کا نشانہ بنا کر شہید کر دیا۔ توقیر عباس کے والد رستم علی کے مطابق وہ اور توقیر حسین فجر کی نماز پڑھ کر جا رہے تھے کہ توقیر حسین راستے میں ’’علیؑ حق، علیؑ حق‘‘ کے نعرے لگا رہا تھا، سکیورٹی گارڈ نے منع کیا، اس کے باوجود توقیر نعرے لگانے سے باز نہیں آیا۔ رستم علی نے ’’اسلام ٹائمز‘‘ کو بتایا کہ وہ گھر پہنچے تو سوسائٹی کے گارڈ حاجی خوشی، ایڈمن افسر ہارون اور ہارون کا بیٹا، ان کے گھر پر حملہ آور ہوگئے اور توقیر حسین کو زبردستی اُٹھا کر سوسائٹی کے دفتر لے گئے۔

رستم علی کے بقول وہ اپنے بیٹے شکیل حسین اور ہمسائے کاشف کو لے کر سوسائٹی آفس پہنچے، تو ملزمان توقیر حسین کو تشدد کا نشانہ بنا رہے تھے۔ رستم علی نے مزید بتایا کہ ہم نے سکیورٹی گارڈ اور ایڈمن افسر سے معافی مانگی اور یقین دلایا کہ توقیر آئندہ نعرے نہیں لگائے گا، لیکن انہوں نے ہماری ایک نہ سنی اور توقیر حسین کے ہاتھ پاوں باندھ کر تشدد کرتے رہے، جس سے وہ جاں بحق ہوگیا۔ توقیر حسین کے والد نے اندراج مقدمہ کیلئے تھانہ سندر لاہور میں درخواست دیدی، جس پر پولیس نے گارڈ اور ایڈمن افسر کو حراست میں لے لیا ہے۔ ملزمان کی مزید تفتیش کی جا رہی ہے۔

نام:
ایمیل:
* رایے:
* :