IQNA

9:11 - February 18, 2020
خبر کا کوڈ: 3507253
تہران (ایکنا)- مذہبی جماعت کی ریلی پر حملے کی کوشش/ پولیس کی ہوشیاری سے بڑا نقصان نہیں ہوا

جیو نیوز کے مطابق کوئٹہ کی اہم شاہراہ شارع اقبال پر پریس کلب کے قریب خودکش دھماکا ہوا جس کے نتیجے میں دو پولیس اہلکاروں عبدالرسول ،محمدزمان اور لیویز اہلکار محمد حمید سمیت 8 افراد محمد نسیم ،منظور احمد، احمد اللہ، حضرت علی شہید جبکہ 20افراد زخمی ہوگئے۔

دھماکے کے نتیجے میں قریبی عمارتوں کے شیشے ٹوٹ گئے جبکہ متعدد گاڑیاں اور موٹر سائیکلیں بھی تباہ ہوگئیں۔

پولیس ،ایف سی اور دیگر سیکیورٹی اداروں نے جائے وقوع پر پہنچ کر زخمیوں اور لاشوں کو اسپتال منتقل کردیا جبکہ جائے وقوع کو سیل کر کے شواہد اکھٹے کر نے کا سلسلہ شروع کردیا گیا ہے۔

ڈی آئی جی پولیس کوئٹہ عبدالرزاق چیمہ نے جائے وقوع پر میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ شارع اقبال پر دھماکا خود کش تھا، پولیس اہلکاروں نے جب مبینہ حملہ آور کو روکا تو خود کش حملہ آور نے دھماکا کردیا۔

انہوں نے کہا کہ دھماکے میں 8 سے 10 کلو گرام بارودی مواد استعمال کیا گیا۔ عبدالرزاق چیمہ نے کہا کہ شہر کی سیکیوٹی مزید سخت کردی گئی ہے۔ اسپتال ذرائع کے مطابق سول اسپتال میں ایک نامعلوم شخص کا سر اور جسم کے اعضاء بھی منتقل کیے گئے ہیں جو مبینہ طور پر خود کش حملہ آور کے ہو سکتے ہیں۔

وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان اور وزیر داخلہ ضیا لانگو نے بم دھماکے کی مذمت کرتے ہوئے واقعے کی رپورٹ طلب کرلی ہے۔

وزیراعلیٰ بلوچستان نے آئی جی پولیس کو عوام کے جان ومال کے تحفظ کو ہر صورت یقینی اور شہر کی سیکیورٹی کے اقدامات کو مزید مؤثر بنانے کی ہدایت کی ہے

214499

نام:
ایمیل:
* رایے: