IQNA

9:05 - January 20, 2022
خبر کا کوڈ: 3511147
وال سٹریٹ جرنل نے ابوظہبی پر انصار اللہ یمن کے حالیہ حملے کو دلیرانہ کارروائی قرار دیا۔

سوشل میڈیا زرایع نے نقل کیا ہے کہ تفتیش کاروں کے مطابق، حوثیوں نے متحدہ عرب امارات کو نشانہ بنانے کے لیے جدید میزائل اور ڈرون کا استعمال کیا - یہ تہران کے دلیر اتحادیوں کی جانب سے مشرق وسطیٰ کی سلامتی کے لیے بڑھتے ہوئے خطرے کا ایک مہلک مظاہرہ ہے۔

حوثیوں کی کارروائی ان عسکریت پسندوں کی سب سے زیادہ دکھائی دینے والی فوجی پیش قدمی تھی جو ایک دہائی سے بھی کم عرصہ قبل مشین گنوں اور راکٹ لانچروں پر انحصار کرتے تھے، لیکن اب وہ ایران کی مدد سے یمن میں اپنے پہاڑی گڑھ سے تقریباً 1,000 میل دور اپنی طاقت کو بڑھا کر دکھا سکتے ہیں۔

خطے کے مختلف مبصرین کا کہنا ہے کہ "اگرچہ سعودی قیادت میں اتحاد کے فضائی حملوں میں شدت میدان جنگ میں کچھ فتوحات کا باعث بنی ہے، لیکن کوئی بھی حتمی امن معاہدہ یمن میں حوثیوں کے لیے ایک کارنامہ ہو سکتا ہے، جس کے نتیجے میں وہاں تہران کے اثر و رسوخ کو تقویت ملے گی۔"

واشنگٹن میں مڈل ایسٹ انسٹی ٹیوٹ میں خلیج فارس کے ماہر عندوح الدوسری نے کہا، "ایران نے یمن میں جنگ جیت لی ہے۔" "ایران نے حوثیوں کے ساتھ مل کر جو کیا ہے وہ بہت اہم ہے۔"

ٹیگس: ایران ، یمنی ، جنگ ، فاتح
نام:
ایمیل:
* رایے:
* captcha: